Code : 3286 8 Hit

کورونا جیسی صورتحال میں بھی صیہونی ظلم وبربریت سے باز نہیں آرہے؛فلسطینیوں کا اقوام متحدہ کو خط

اقوام متحدہ میں فلسطینی اتھارٹی کے مستقل نمائندے نے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل ، سلامتی کونسل کے صدر اور اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے صدر کو تین خطوط ارسال کیے ہیں جن میں لکھا ہے کہ کورونا کے باوجود صیہونی حکومت اپنی غیر قانونی سرگرمیوں سے باز نہیں آئی ہے۔

ولایت پورٹل:سما نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ میں فلسطینی اتھارٹی کے مستقل نمائندے  ریاض منصورنے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گٹیرس ، سلامتی کونسل کے صدر ڈومینیکن ریپبلک اور اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے صدر کے نام  تین الگ الگ خطوط لکھ کرانھیں صیہونی حکومت کی غیر انسانی سرگرمیوں سے آگاہ کیا ہے۔
منصور نے ان خطوط میں لکھا ہے  کہ کورنا وائرس سے نمٹنے کے لیے فلسطین سمیت دنیا کو درپیش بے مثال چیلنجوں کے باوجود  قابض صیہونی حکومت نے اپنی غیرقانونی پالیسیوں اور اقدامات کو ترک نہیں کیا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ فلسطینی اتھارٹی نے کرونا کے مزید پھیلنے سے بچنے کے لئے ہنگامی صورتحال کا اعلان کیا ہے لیکن صیہونی حکومت نے  اس صورتحال کا فائدہ اٹھاتے ہوئے غیر قانونی بستیوں کی تعمیر میں  تیزی لائی ہے۔
انھوں نے مزید کہا کہ صیہونیوں کے ہاتھوں فلسطینیوں کے گھروں کی تباہی ، زرعی مصنوعات کی تباہی ، فلسطینی قیدیوں کو جبری طور پر بے گھر کرنے ، فلسطینی علاقوں پر حملوں کا تسلسل اور عام شہریوں پر حملوں کی وجہ سے متعدد مقامات میں کورونا کا مقابلہ کرنے کی کوششوں کی غیر موثر ہونے کا سبب بنا ہے۔
ریاض منصور نے کہا کہ اس حقیقت کے باوجود کہ صیہونی حکومت کے ذریعہ چار فلسطینی قیدی کورونا وائرس سے متاثر ہوئے  ہیں صیہونیوں نے جیلوں میں قید 5000 سے زیادہ فلسطینی قیدیوں جن میں 180 بچے اور 43 خواتین شامل  ہیں، کی رہائی کی درخواستوں کو مسترد کردیا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम