Code : 2782 877 Hit

ہم پوری دنیا میں پھیلے ہوئے اپنے اینٹی میزائل سسٹم کو مشرق وسطی میں لے آئیں تب بھی ایرانیوں کو نہیں روک پائیں گے: امریکی دفاعی تجزیہ کار

امریکی سینٹر برائے قومی مفاد کے دفاعی مطالعات کے ڈائریکٹر نے عراق میں امریکی فوجی ٹھکانوں پر بدھ کی صبح ایران کے حملے پر ڈونلڈ ٹرمپ کو خبردار کیا ہے۔

ولایت پورٹل:امریکی سینئر دفاعی تجزیہ کار کیسیئن نے سی این بی  نیوز ایجنسی کو دیے جانے والے اپنے انٹرویو میں ایران کے بیلسٹک میزائل پروگرام کا مقابلہ کرنے میں امریکہ کی ناکامی پر زور دیتے ہوئے واشنگٹن کے خطرات سے نمٹنے کے لئے تہران کی اعلی صلاحیت سے خبردار کیا ہے،رپور ٹ کے مطابق امریکی قومی مفادات سینٹر کے ڈیفنس اسٹڈیز  شعبہ کے ڈائریکٹر  کیسیئن نے ایران کی جانب سے عراق میں واقع امریکی اڈوں  پر بدھ کی صبح ہونے والے حملے کا ذکر کرتے ہوئے ، ایران کو "راکٹ سپر پاور" قرار دیا ہے،امریکی تجزیہ کار کے مطابق ، ایرانی حکام کا عراق میں امریکی عہدوں پر حملہ کرنے کا مقصد یہ ظاہر کرنا تھا کہ وہ امریکیوں کو نقصان پہنچا سکتے ہیں،امریکی قومی مفادات سینٹر کے ڈیفنس اسٹڈیز  شعبہ کے ڈائریکٹر کیسیئن  نے ایران کی میزائل طاقت کا ذکر تے ہوئے امریکی وزارت دفاع سے کہا کہ آپ کو یہ بات ذہن میں رکھنی ہوگی کہ ایرانیوں کے پاس2000 سے زیادہ بیلسٹک میزائل موجود ہیں،کیسیئن نے اعادہ کیااگر امریکہ ایرانی بیلسٹک میزائل حملے کو روکنے کی کوشش بھی کرتا تو نہیں روک سکتا تھا اس لیے کہ  ہم ایران کے میزائلوں کو روکنے کے قابل نہیں ہیں،انھوں نے یہاں تک کہا ہےکہ اگر ہم پوری دنیا میں پھیلے ہوئے اپنے اینٹی کرافٹ سسٹم کو مشرق وسطی میں لے آئیں تب بھی  ہم ایرانیوں کو نہیں روک پائیں گے،ان کا خیال ہے کہ تہران اور واشنگٹن کے مابین ایک پوری طرح سے اوربراہ راست تصادم ایک "خونی تنازعہ" میں تبدیل ہوسکتا ہے لیکن ایرانیوں کے پاس "نہ صرف امریکی فوجی اڈوں بلکہ امریکی جنگی جہازوں اور ہر طرح کے امریکی فوجی اڈوں کو بھی بہت بڑا نقصان پہنچانے کی صلاحیت ہے۔

1
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम