صیہونی قابض فوج کی سربراہی میں آبادکاروں کے ہاتھوں مسجد اقصی کی بے حرمتی

صہیونیوں نے مسجد اقصی کی توہین اور مقبوضہ بیت المقدس پر یہودی قبضے کے منصوبے کو ایجنڈے میں شامل کرلیا ہے۔

ولایت پورٹل:قابض صہیونی فوج اور پولیس کی فول پروف سکیورٹی میں یہودی شرپسندوں کی مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے،اسی جارحیت کو جاری رکھتے ہوئے یہودی طلبا سمیت درجنوں یہودی آباد کاروں نےصیہونی فوج اور پولیس کی  فول پروف سکیورٹی میں  مسجد اقصیٰ میں داخل ہو کر مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔
مرکزاطلاعات فلسطین کےمطابق اسرائیلی فوج اور پولیس کی فول پروف سکیورٹی میں یہودی آباد کاروں، یہودی طلباء اور صہیونی انٹیلی جنس حکام سمیت  ستر کے قریب یہودیوں نے مسجد اقصیٰ میں گھس کر بے حرمتی کی، یہودی آباد کاروں کے ہمراہ مسجد اقصیٰ پر دھاوے بولنے والوں میں اسرائیلی اسپیشل فورسز کے اہلکار بھی شامل تھے جو سنہ 1967ء سے زیرقبضہ مراکشی دروازے کے راستے مسجد اقصیٰ میں داخل ہوتے اور مقدس مقام کی بے حرمتی کرتے رہے اوراسلام کے خلاف نعرہ بازی کرتے رہے۔
واضح رہے کہ مسجد اقصیٰ پر صہیونیوں کے یکے بعد دیگرے حملے اس وقت سامنے آتے ہیں جب انسانی حقوق کے گروہ اس طرح کے اقدامات کے باوجود خاموش رہتے ہیں  جس سے صیہونی درندوں کو مزید شے ملتی ہے اور منصوبہ بند طریقہ سے اس طرح کے اقدامات کرتے ہیں
قابل ذکر ہے کہ  یہودی آباد کاروں کے دھاووں کےساتھ ساتھ قابض پولیس نے بیت المقدس کے فلسطینی نمازیوں کو مسجد اقصیٰ سے بے دخل کرنے کی مہم بھی جاری رکھی ہوئی ہے ۔
یہاں ایک اور بات بھی قابل غور ہے کہ صہیونی اس لیے مسجد اقصی کی توہین جاری رکھی ہوئے ہیں کیوں کہ صہیونی حکومت نے مقبوضہ بیت المقدس پر یہودی قبضے کے منصوبے کو ایجنڈے میں شامل کرلیا ہے اور عالمی برداری کی خاموشی نیز امریکہ اور یورپی ممالک کی مکمل حمایت کے ساتھ اس پر کام کررہی ہے جس کی ایک کڑی مغربی کنارے کے تیس فیصد حصہ کو مقبوضہ علاقوں میں الحاق کرنا ہے۔




0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین