Code : 2678 11 Hit

ہانگ کانگ میں کرسمس کے موقع پر پھر سے مظاہرے شروع

ہانگ کانگ میں مظاہرین نے کرسمس کے موقع پر سانٹا کلاز کی ہیٹ پہن کر مظاہرے دوبارہ شروع کیے ہیں۔

ولایت پورٹل:ایسوسی ایٹڈ پریس کی رپورٹ کے مطابق ہانگ کانگ میں چھ مہینے پہلے شروع ہونے والے مظاہرے نئے عیسوی سال کی آمد پر نئے رنگ میں ظاہر ہوئے ہیں جس میں مظاہرین  سانٹا کلاز کی ہیٹ پہن کر سڑکوں پر آرہے ہیں،رپورٹ کے مطابق کالے کپڑے پہنے ہونے مظاہرین نے دکانوں کے شیشے توڑے جس کے جواب میں  پولیس نے آنسو گیس کا استعمال کیا اور متعدد مظاہرین کو گرفتار کرلیا،قابل ذکر ہے کہ ہانگ کانگ پر 1997تک انگریزوں کی حکومت تھی اس کے بعد یہ چین کے قبضہ میں چلا گیا لیکن سیاسی ڈھانچہ ویسے ہی باقی رہا  یعنی بیجنگ اور ہانگ کانگ د و سسٹم کے  تحت ایک ملک چل رہا ہے،یہ خطہ ملکی معاملات میں سیاسی طور پر خود مختار ہے صرف ب فوجی اور سکیورٹی امور میں بیجنگ کی پالیسیوں کی پیروی کرتا ہے،واضح رہے کہ تقریبا چھ ماہ قبل ہانگ کانگ  کے ملزموں کو قانونی کاروائی کے لیے چین کے حوالہ کیے جانے کے قانون پاس ہونے  کے خلاف یہاں کی عوام نے  احتجاج کا آغاز کیا تھا جو  اب تک جاری ہے اور اس میں کہیں کہیں پر پولیس اور مظاہرین کدرمیان جھڑپیں بھی ہوتی رہتی ہیں ،قابل غور ہے کہ اگرچہ اب اس قانون کو مکمل طور پر ختم کردیا گیا ہے ، لیکن علاقے میں احتجاج جاری ہے اور حال ہی میں وہ افراتفری اور تخریب کاری کی شکل اختیار کرچکا ہے،ہانگ کانگ کے پرتشدد مظاہرین کے لئے مغربی حمایت جاری ہے اور اب  جبکہ حوالگی بل کی منسوخی کے باوجود  وہ پیچھے ہٹنے کو تیار نہیں ہیں ، جو ان کے احتجاج کی سب سے بڑی وجہ تھی ، اور اب وہ شہر بھر میں تخریبی کارروائیاں  انجام دے رہے ہیں ، اور نجی املاک کو نقصان پہنچا رہے ہیں نیز سکیورٹی فورسز اور سرکاری عمارتوں کو بھی نشانہ بنا رہے ہیں۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین