کورونا کے عالمی ویکسینیشن پروگرام براعظم افریقہ سب سے پیچھے

ایک نئی رپورٹ سے پتہ چلتا ہے کہ افریقی براعظم صرف اسی صورت میں کوئیڈ-19 کی وبا پر قابو پا سکتا ہے جب 2022 کے آخر تک خطے کی 70 فیصد آبادی کو ویکسین لگائی جائے، تاہم ویکسین کی تقسیم میں شدید عدم مساوات نے اس براعظم کو ویکسینیشن پروگرام سے باہر دھکیل دیا ہے۔

ولایت پورٹل:روئٹرز نیوز ایجنسی نے آج (پیر) کو جاری ہونے والی ایک رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ جنوبی افریقہ میں اومیکرون وائرس کی دریافت اس بات کی نشاندہی کرتی ہے کہ وائرس کی تبدیلی پر حفاظتی ٹیکوں کے کم اثر کے بارے میں کیا کہا گیا ہے جبکہ اس بر اعظم میں انفیکشن کی شرح میں اضافہ وائرس دوسرے ممالک میں پھیلنے کا سبب بن سکتاہے۔
 مو ابراہیم فاؤنڈیشن نے افریقہ میں کوئیڈ 19 کی صورتحال پر ایک نئی رپورٹ میں کہا ہے کہ 2021 کے آخر تک افریقہ کی 40 فیصد آبادی کو ویکسین دینے کے عالمی ادارہ صحت کا ہدف اس براعظم  کے54 ممالک میں سے صرف پانچ ممالک میں ہی پورا ہو پائے گا ، انسٹی ٹیوٹ کے مطابق 15 افریقی ممالک میں سے صرف ایک کو مکمل طور پر ویکسین لگائی گئی ہے جبکہ G7 ممالک کی 70 فیصد آبادی کو کورونا ویکسین مل چکی ہے۔
واضح رہے کہ  مو ابراہیم فاؤنڈیشن کی بنیاد ایک سوڈانی ارب پتی نے ٹیلی کمیونیکیشن کے شعبے میں افریقہ میں اقتصادی ترقی اور حکمرانی کو بہتر بنانے کے لیے رکھی تھی،فاؤنڈیشن نے ایک بیان میں کہاہے کہ کورونا بحران کے آغاز کے بعد سےہی ہماری فاؤنڈیشن اور دیگر افریقی حامی تنظیموں نے خبردار کیا تھا کہ افریقہ میں لوگوں کو ویکسین نہ دینا وائرس کی نئی اقسام کی افزائش گاہ بن سکتا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین