طالبان کے متنازعہ وزیر تعلیم برطرف

طالبان کے ترجمان نے اعلان کیا کہ اس گروپ کے سربراہ نے مولوی نوراللہ منیر کی جگہ مولوی حبیب اللہ آغا کو عبوری حکومت کا نیا وزیر تعلیم مقرر کیا ہے۔

ولایت پورٹل:طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے اعلان کیا ہے کہ مولوی نور اللہ منیر کی جگہ قندھار کی صوبائی علماء کونسل کے سابق سربراہ مولوی حبیب اللہ آغا کو عبوری حکومت کا نیا وزیر تعلیم مقرر کیا گیا ہے،مجاہد کے مطابق نوراللہ منیر کو طالبان کے رہنما مولوی ہیبت اللہ اخوندزادہ کے حکم کی بنیاد پر مرکزی دارالافتاء جنرل ڈائریکٹوریٹ کا سربراہ بھی مقرر کیا گیا ہے۔
 طالبان کے ترجمان نے کہا کہ مولوی محمد محسن ہاشمی کو پنجشیر کا نیا گورنر اور آخوند کو لوگر کا گورنر مقرر کیا گیا ہے، واضح ر ہے کہ طالبان کے وزیر تعلیم ایسے وقت میں تبدیل ہورہے ہیں جب کہ لڑکیوں کے اسکولوں کو دوبارہ کھولنے کے حوالے سے ان کے مختلف بیانات تنازعہ کا باعث بنے ہیں، وہ بارہا کہہ چکے ہیں کہ لڑکیوں کے اسکول دوبارہ کھولنے کی مسلسل بندش کی وجہ افغان عوام کا کلچر ہے جو لڑکیوں کو سکول جانے کی اجازت نہیں دیتا۔
یاد رہے کہ طالبان ایک سال سے زائد عرصے سے لڑکیوں کو اسکول جانے سے روک رہے ہیں اور اگرچہ اس فیصلے پر بین الاقوامی سطح پر شدید ردعمل سامنے آیا ہے، تاہم طالبان کا لڑکیوں کے اسکول بند کرنے کا فیصلہ اب بھی برقرار ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین