Code : 2576 52 Hit

امریکہ کی سعودی عرب میں ایٹمی پاور پلانٹ بنانے کی شرط

امریکی کانگریس کے قانون سازوں کا کہنا ہے کہ امریکہ کے قومی دفاعی بل میں ریاض جیسی حکومتوں کے لیے ایٹمی پاور پلانٹ بنانے کے لیے شرط موجود ہے ۔

ولایت پورٹل:رائٹر نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق امریکی کانگریس کے ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب اور دوسرے ممالک جو جوہری توانائی کے پلانٹ کی تعمیر کے لئے امریکی ٹکنالوجی  استعمال کرنے کے خواہاں ہیں ، انہیں اقوام متحدہ کے معائنے کے نظام کے ایک بل پاس کرنا ہوگا تا کہ انھیں  امریکی دفاعی پالیسی بل میں شامل کیا جاسکے،امریکی ایوان نمائندگان میں ڈیموکریٹک پارٹی کے دو اراکین  نے منگل کو کہا کہ امریکی بل میں سعودی عرب سمیت ان ممالک سے ایڈیشنل پروٹوکول پر عمل پیرا ہونے کا مطالبہ کیا گیا ہے ، جس میں آئی اے ای اے کے انسپکٹرز کو اجازت ہوتی ہے کہ  جب بھی  چاہیں اس ملک کے ایٹمی پلانٹ کا معائنہ کرسکتے ہیں تاکہ یقین حاصل ہوسکے کہ مذکورہ ملک ایٹم بم تیار نہیں کررہا ہے،یادرہے کہ نیوکلیئر عدم پھیلاؤ معاہدہ (این پی ٹی) کا اضافی پروٹوکول ایک دستاویز ہے جو بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے ساتھ حفاظتی معاہدے کے حامل ممالک کے لئے عالمی جوہری عدم پھیلاؤ معاہدے کے مقاصد میں شراکت کے لئے حفاظتی نظام کی تاثیر کو بڑھانے کے لئے تیار کیا گیا ہے،بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی کے ممبر ممالک کو ایڈیشنل پروٹوکول کو بطور "جامع سیف گارڈز معاہدے کا الحاق" قبول کرنا ہوتا ہے،پروٹوکول معاہدہ  کے تحت ایجنسی کو حق ہے کہ وہ کسی بھی وقت ایٹمی پلانٹ کا معائنہ کرے ،عدم پھیلاؤ کے تجزیہ کاروں کا سعودی کے بارے میں اس  اقدام کومثبت قراردیتے ہوئے کہنا ہے کہ   سعودیوں کے غیر مناسب برتاؤ رویہ کے پیش نظر ، امریکی کانگریس کوان کی  جوہری سرگرمیوں کی نگرانی اور اس پر قابو پانے کے لئے مزید اقدامات کرنا چاہئے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین