Code : 2542 38 Hit

لندن میں مسخرہ،امریکہ میں مؤاخذہ؛ٹرمپ کا سب سے بُرا دن

امریکی صدر بدھ کے روز صبح سویرے وقت سے پہلے ہی بغیر پریس کانفرانس کیے لندن سے روانہ ہوگئے جبکہ واشنگٹن میں ایوان نمائندگان کے سامنے ان کے مواخذے کی سماعت چل رہی تھی۔

ولایت پورٹل:وائٹ ہاؤس آنے کے بعد ٹرمپ نے کم برے دن نہیں دیکھے لیکن  کل کا دن ان کے لیے بدترین تھا  جہاں ایک طرف وہ جہاں وہ نیٹو کے اجلاس میں مہمان تھے اوردوسرے ممالک کے رہنماؤں کے ساتھ ہاتھ ملا رہے تھے وہیں ان کے اپنے ملک میں ان کا مؤخذہ چل رہا تھا،بدھ کے روز علی الصبح جاری ہونے والی ایک ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ  نیٹو کے رہنما کس طرح  ٹرمپ کا مذاق کا مذاق اڑا رہے ہیں،کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون اور برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن کو ٹرمپ کو باتونی کہتے ہوئے ان کی حفاظتی ٹیم کے حیرت زدہ منصوبہ پر ان کا مذاق اڑایا ،اگر ذرہ سے بھی  امید تھی کہ نیٹو سربراہی اجلاس کی 70 ویں سالگرہ اتحاد کا مظاہرہ کرے گی ، تو وہ  اس  ویڈیو سے رفو چکر ہوگئی،ٹرمپ کو سیاسی تنقید کو بھی ذاتی حملہ کے ذریعہ جواب دیتے ہیں اس ویڈیو پر بھی رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے ٹروڈو کو "ڈبل ہیڈر" اور "منافق" کے لقب سے یاد کرتے ہیں اور کہتے ہیں  کہ وہ بظاہر کینیڈا پرفوجی اخراجات میں اضافہ کرنے کے سلسلہ میں  امریکی دباؤ سے ناراض اسی لیے  امریکی صدر کے پیچھے بات کرتا ہیں ،یادرہے کہ ٹرمپ نے نیٹو کی اختتامی پریس کانفرنس میں شرکت کے بغیرٹویٹ کیا کہ وہ لندن سے جارہے ہیں اور ایسا ہی کیاگذشتہ سال کی طرح نیٹو سربراہی اجلاس کو ادھورا چھوڑ کر واشنگٹن واپس چلے گئے،گارڈین اخبار نے لکھا کہ اتحادیوں نے ٹرمپ کا مذاق اڑایا توانہوں نے لندن مذاکرات کو وقت سے پہلے ہی چھوڑ دیا،برطانوی اخبار میٹرو نے لکھا کہ ٹرمپ منھ بنا کر گھر چلے گئے۔


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम