تائیوان کے بارے میں چین کا امریکہ کو انتباہ

چین کے سی‌جی‌ٹی‌این چینل نے جو بائیڈن کی حکومت کو ایک سخت نوٹ جاری کرتے ہوئے خبردار کیا  ہے کہ وہ بیجنگ کے اندرونی معاملات، خاص طور پر تائیوان میں مداخلت کرنے سے باز رہے۔

ولایت پورٹل:چین کے سرکاری چینل سی‌جی‌ٹی‌این کی رپورٹ کے مطابق بیجنگ کے سینئر عہدیدار نے واشنگٹن کو چین کے اندرونی معاملات خاص طور پر تائیوان میں مداخلت کے بارے میں خبردار کیا ہے، چین کے سرکاری ذرائع ابلاغ نے امریکہ کو ان کی سرخ لکیریں عبور کرنے کے نتائج کے بارےمیں انتباہ دیا ہے۔
 چین کے سی‌جی‌ٹی‌این  چینل کی رپورٹ کے مطابق 4 اگست کو بائیڈن حکومت نے تائیوان کو 750 ملین ڈالر مالیت کے اسلحے کی فروخت کا اعلان کیا، یہ اقدام واشنگٹن اور اس کے اتحادیوں کی ایک وسیع تر مہم کا حصہ ہے تاکہ وہ متحد چین کی پالیسی کے لیے اپنے وعدوں کو آہستہ آہستہ کم کریں،واضح رہے کہ امریکہ اور اس کے اتحادی  جارحانہ انداز میں اور نہایت ہی چالاکی کے ساتھ تائیوان کی آزادی کے لیے اپنی حمایت کو تیز کر رہے ہیں ، چینی خودمختاری میں دخل اندازی کر رہے ہیں اور ساتھ ہی سرکاری طور پر یہ دعویٰ کر رہے ہیں کہ وہ ایسا نہیں کر رہے  ہیں۔
 چین کے سرکاری میڈیا نے لکھا ہے کہ امریکہ علیحدگی پسندوں کی حمایت کرکے نیز چین کی قطعی اور سرکاری طور پر اعلان کردہ سرخ لکیروں کو عبور کرکے آبنائے تائیوان میں امن ، استحکام اور سلامتی کو نقصان پہنچا رہا ہے،جبکہ یہ عمل ناقابل برداشت ہے،تاہم انھیں معلوم ہونا چاہیےکہ چین کے دوبارہ اتحاد (چین اور تائیوان) کا عزم ناقابل تردید ، اٹوٹ اور ناقابل انکار ہے۔
واضح رہے کہ  اگرچہ چین پرامن طریقوں سے چین اور تائیوان اتحاد کو حاصل کرنے کے لیے پرعزم ہے ،تاہم واشنگٹن اپنی اشتعال انگیز کاروائیوں اور طاقت کے توازن کو تبدیل کرنے کی کوششوں کے ذریعےاس اتحاد کی راہ میں  تیزی سے رکاوٹیں کھڑی کر رہا ہے ۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین