برطانیہ دنیا کا فراڈ کی راجدھانی

برطانوی اخبار کا کہنا ہے کہ برطانیہ میں سالانہ ۳ بلین پاؤنڈ فراڈ پر خرچ کیے جاتے ہیں جس کی وجہ سے یہ ملک دنیا میں جرائم اور فراڈ کا دارالحکومت بن چکا ہے۔

ولایت پورٹل:برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق برطانوی شہریوں کو دھوکہ دہی سے ہونے والا نقصان امریکہ، کینیڈا اور آسٹریلیا سمیت دیگر معروف معیشتوں کے مقابلے میں بہت زیادہ ہے، ڈیلی میل نے برطانیہ میں روز مرہ کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافے کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا کہ مجرم بوڑھوں اور کمزوروں کو دھوکہ دینے کے لیے نئے طریقے تلاش کر رہے ہیں  جس سے صورتحال صرف بگڑ رہی ہے۔
رپورٹ کے مطابق اس ملک میں بدعنوانیوں کی ایک خوفناک نئی لہر  صرف اپریل میں 700 ملین ڈالر کی چوری کا باعث بنی جبکہ پچھلے سال اوسطاً 200 ملین ماہانہ کا فراڈ ہوا جبکہ برطانوی سائبر سکیورٹی ایجنسی نے گزشتہ ماہ اطلاع دی تھی کہ اس نے گزشتہ سال 2.7 ملین سائبر جرائم پیشہ افراد کے دھوکوں کو ناکارہ بنایا جو اس سے ایک سال پہلے کے مقابلے میں چار گنا زیادہ ہے۔
برطانوی نیشنل سائبر سکیورٹی سینٹر جو برطانوی حکومت کے کمیونیکیشن ہیڈ کوارٹر کے زیراہتمام کام کرتا ہے، نے کہا کہ پکڑے گئے گھوٹالوں میں مشہور شخصیات کی تصدیق اور جعلی ای میلز اور متاثرین سے بھتہ لینا شامل ہے، تنظیم نے زور دیا کہ شناخت شدہ کیسوں کی تعداد میں اضافہ مجرموں کے جارحانہ انداز کی نشاندہی کرتا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین