بن سلمان اپنی بگڑی ساکھ بہتر بنانے کے لیے رشوت دیتے ہیں:امریکی تحقیقات ادارہ

ایک امریکی تحقیقاتی ادارے نے اعلان کیا ہے کہ سعودی ولی عہد دنیا میں اپنی تصویر بہتر کرنے کے لیے مختلف جماعتوں کو رشوت دے رہے ہیں۔

ولایت پورٹل:کارنیگی اینڈومنٹ فار انٹرنیشنل پیس نے اعلان کیا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اپنی گرتی ہوئی عالمی ساکھ کو بہتر بنانے کے لیے رشوت دے رہے ہیں۔
سعودی لیکس کے مطابق انسٹی ٹیوٹ نے کہا کہ بن سلمان ایک غیر منظم اور لاابالی شخص ہیں جو اپنے آپ کو امریکی صدر جو بائیڈن سے کمتر محسوس کرتے ہیں نیز وائٹ ہاؤس کی جانب سے ان سے رابطہ کرنے سے انکار پر اب بھی ناراض ہیں۔
انسٹی ٹیوٹ کے مطابق محمد بن سلمان کا خیال ہے اگر وہ مختلف جماعتوں کو پیسے اور رشوت دے دیں تو ایک لبرل مصلح کے طور پر ان کی بین الاقوامی ساکھ محفوظ رہ سکتی ہے ، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جب ہم بن سلمان کے ذاتی مقاصد کے بارے میں بات کرتے ہیں تو وہ خود کو ایک مضبوط آدمی کے طور پر پیش کرتے ہیں جو بدعنوانی سے لڑتا ہے، غیر روایتی طریقے اپناتا ہے نیز ان سے اختلاف رائے رکھنے والے اور ناقدین کو دبانے کے لیے الیکٹرانک جاسوسی کے آلات تک استعمال کرتا ہے۔
واضح رہے کہ ابھی حال ہی میں ولسن اسٹڈی سینٹر نے محمد بن سلمان کو ایک آمر اور جمہوریت نیز انسانی حقوق کا دشمن قرار دیتے ہوئے ان پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین