Code : 4086 8 Hit

بن سلمان مجھے قتل کرنےکی کوشش کر رہے ہیں؛سعودی خفیہ ایجنسی کے سابق عہدہ دار کی امریکی عدالت میں درخواست

سعودی انٹلیجنس کے ایک سابق عہدیدار نے امریکی فیڈرل بیورو آف انویسٹی گیشن کی عدالت میں ایک مقدمہ دائر کیا ہے جس میں انہوں نے الزام لگایا ہے کہ 2018 میں سعودی ولی عہد شہزادہ نے انھیں مارنے کے لئے ایک ٹیم تشکیل دی۔

ولایت پورٹل:روزنامہ ڈیلی صباح  کی رپورٹ کے مطابق سعودی خفیہ ایجنسی کے سابق اعلی عہدیدار ڈاکٹر سعد الجبری  جو شہزادہ محمد بن نایف کے نائب تھے ، نے جمعرات کو امریکی وفاقی عدالت میں دائر مقدمے میں کہا کہ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان 2018 میں  انھیں قتل کرنے کے لیے ایک ٹیم سعودی عرب  سے کینیڈا  بھیجی لیکن یہ سازش کینیڈا کے حکام نے ناکام بنا دی،یادرہے کہ اس سال کے شروع میں متعدد سعودی  ذرائع نے روئٹرز کو بتایا تھا کہ الجبری کو کچھ حساس معلومات والی دستاویزات تک رسائی حاصل ہے اور محمد بن سلمان کو خدشہ ہے کہ یہ معلومات افشاء ہوجائیں گی۔
کولمبیا کی امریکی فیڈرل عدالت میں محمد بن سلمان اور 24 دیگر افراد کے خلاف دائر 107 صفحات پر مشتمل مقدمے میں  الجبری نے کہا  ہےکہ اکتوبر 2018 میں سعودی ولی عہد نے ٹاسک فورس  پر مشتمل ایک ٹیم کینیڈا بھیجی، قابل ذکر ہے کہ سعودی حکومت کے میڈیا آفس نے ابھی تک اس درخواست پر کوئی رد عمل ظاہر نہیں کیا ہےنیز اوٹاوا میں موجود سعودی سفارتخانے نے اس پر کوئی  بھی تبصرہ کرنے سے انکار کیا ہے۔
یاد رہے کہ جب سے بن سلمان اقتدار میں آئے ہیں انھوں نے مختلف بہانوں اپنے مخالفین کو دبانے کی کوشش کی ہے کبھی ان کی دولت ضبط کی ہے تو کبھی انھیں جیل میں ڈال دیا ہے،حال ہی میں انھوں نے سعودی خفیہ ایجنسی کے سابق عہدہ دار سعد الجبری جو اس وقت کنیڈا میں مقیم ہیں  انھیں  سعودی عرب واپس آنے پر مجبور کرنے کے لیے ان کے بچوں کو گرفتار کر لیا ہے جس کی وجہ سے بن سلمان کو بین الاقوامی سطح پر کافی تنقید کا سامنا کرنا پڑا ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین