امریکی کمپنیوں کا بن سلمان کو بہت بڑا دھوکہ

ایک امریکی اخبار نے سعودی عرب میں سرمایہ کاری میں تیزی سے کمی اور امریکی کمپنیوں کے سعودی ولی عہد کو زبردست دھچکے کا انکشاف کیا ہے۔

ولایت پورٹل:امریکی اخبار وال اسٹریٹ جرنل نے اپنے ایک کالم میں سعودی عرب میں غیر ملکی سرمایہ کاری میں ڈرامائی کمی اور غیر ملکی سرمایہ کاروں کے لیے غیر سازگار ماحول میں سعودی عرب کی تبدیلی کے بارے میں لکھا ہے کہ  وال سعودی عرب نے اپنی معیشت کو متنوع بنانے کے لیے دنیا کی بہترین کمپنیوں کو  اپنی طرف راغب کیا ،تاہم 2016 میں سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی کوششوں کے باوجود کاروباری ماحول خراب ہوا ہے اور سرمایہ کار تیل کی دولت سے مالا مال سعودی عرب میں سرمایہ کاری کے لیے بہت پریشان ہیں۔
کالم میں اس حقیقت پر بھی بحث کی گئی ہے کہ سعودی عرب میں Uber ٹیکنالوجی اور جنرل الیکٹرک  سمیت کئی دیگر غیر ملکی کمپنیوں کو اچانک ٹیکس کے اخراجات کا سامنا کرنا پڑا ہے جو اکثر دسیوں ملین ڈالر بنتے ہیں جبکہ گیلیڈ سائنس اور دیگر دوا ساز کمپنیوں نے اپنی پرائیویٹ معلومات کی چوری کا مقدمہ دائر کیا ہے۔
اخبار کے مطابق سعودی عرب اور امریکی فارماسیوٹیکل کمپنیوں کے درمیان ان کی نجی معلومات کی چوری پر طویل عرصے سے جاری تنازعہ نے دوسری کمپنیوں کو احتیاط برتنے پر مجبور کیا ہے جنہیں سعودی عرب بھرتی کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔
 اخبار نے مزید لکھا کہ اس صورت حال کی وجہ سے بہت سی غیر ملکی کمپنیوں نے سعودی عرب میں اپنا کام کم کر دیا یا اپنی سرمایہ کاری اور ترقیاتی منصوبوں کو ملتوی کر دیا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین