آل خلیفہ کی غداری کے خلاف بحرینی عوام کا ٹویٹر طوفان

بحرین کے کارکنوں نے مسئلۂ فلسطین کے خلاف آل خلیفہ حکومت کی غداری کے خلاف اپنی وسیع پیمانے پر مخالفت کا اظہار کرنے کے لئے ٹویٹر طوفان کا آغاز کیا ہے۔

ولایت پورٹل:بحرینی عہدے داروں نے صیہونی دشمن سے تعلقات معمول پر لانے کی ٹرین پر سوار ہوکے مسئلہ فلسطین  کے ساتھ غداری کا ایک نیا باب کھولا ہے تاہم  یہ واضح رہے کہ بحرینی عوام اور اس ملک کی نمایاں شخصیات کا موقف آل خلیفہ حکومت کے رہنماؤں کے  دھوکہ دہی  کے موقف سے الگ ہے، بیشتر بحرینی عوام  نے فلسطینی کاز کی حمایت کی ہے اور صیہونی دشمن کے ساتھ تعلقات معمول پر لانے پر مبنی اپنے قائدین کی غداری کی مذمت کی ہے، اس سلسلہ میں صیہونی حکومت کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کے خلاف بحرینی عوام نے سائبرا سپیس میں مہم  شروع کی ہے۔
یادرہے کہ امریکی صدر کی جانب سے صیہونی دشمن کے ساتھ تعلقات معمول پر لانے کے معاہدے کے اعلان کے بعد سائبر اسپیس میں اس اقدام کے خلاف ٹویٹر پوسٹوں کی لہر دوڑ گئی نیز ، تعلقات کو معمول پر لا ناغداری ہے "اور " فلسطین میرا آئیڈیل ہے " کےہیش ٹیگز حالیہ گھنٹوں میں ٹویٹر پر پہلے نمبر پر رہے، اس سلسلے میں ، بحرین میں انسانی حقوق کے کارکن ابراہیم شریف نے ایک ٹویٹ لکھا کہ امن معاہدے کی نقاب کشائی! مضحکہ خیز خبر ہے، کیا ہم صیہونیوں کے ساتھ جنگ کر رہےتھے کہ اب صلح کرنا چاہتے ہیں؟ مسئلہ یہ ہے کہ یہ سب خفیہ طور پر ہو رہا تھا اور آج انکشاف ہوا ہے، بحرین کے عوام اپنے بھائیوں سے غداری نہیں کریں گے ۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین