بحرین نے فلسطین کی پیٹھ میں خنجر گھونپا ہے:حزب اللہ

حزب اللہ نے بحرین اور صیہونی حکومت کے مابین تعلقات کو معمول پر لانے کے معاہدے کی مذمت کرتے ہوئے اسے فلسطین کی پیٹھ میں خنجر گھونپا قرار دیا ہے۔

ولایت پورٹل:العہد نیوز ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق حزب اللہ نے بحرین اور صیہونی حکومت کے مابین تعلقات کو معمول پر لانے کے معاہدے کی مذمت کرتے ہوئے اسے ایک بہت بڑی غداری قرار دیا ہے، حزب اللہ نے ہفتہ کی شام جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ بحرینی حکومت کی جانب سے قابض اسرائیلی حکومت کو تسلیم کرنے کے اقدام اور اس حکومت کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کی دیگر اقسام کی شدید مذمت کرتے ہیں، حزب اللہ نےبحرین اور اسرائیل کے درمیان ہونے والے معاہدے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ بحرینی حکومت کرایہ دار حکومتوں کے مابین تعلقات کو تبدیل کرنے کے لئے یہ اقدام اٹھا رہی ہےجنہوں نے دشمن کے ساتھ ان کے خفیہ تعلقات کو عوامی تعلقات میں بدل دیا ہے۔
حزب اللہ کےبیان میں کہا گیا ہےکہ ان آمرحکمرانوں نےتل ابیب حکومت کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانےکے اپنے معاہدے کا اعلان کیا ہے اور ان کے جواز کے تمام جواز پیش کیے ہیں نیز اس کی تشہیر بھی کر رہے ہیں لیکن انھیں معلوم ہونا چاہیے کہ فلسطین کی پیٹھ میں خنجر گھونپنےاور اسلامی امت کے ساتھ غداری پر جواز پیش نہیں کیا جاسکتا، حزب اللہ نے کہا کہ اس خیانت اور غداری  کا جواب آزاد ممالک اور فلسطینی مزاحمتی تحریک نیز خطے میں دیگر مزاحمتی گروہوں کے ہاتھ میں ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین