Code : 1040 80 Hit

زائرین کے لئے آیت الله سیستانی کی نصیحتیں

زیارت کا لازمہ یہ ہے کہ زائر امام حسین علیہ السلام کی جاں فشانی کو یاد کرنے کے علاوہ ، احکام و تعلیم دین من جملہ نماز، حجاب، اصلاح ، گذشت و فداکاری ، صبر و برد باری، ادب ، قوانین اور دیگر پسندیدہ باتوں کی مراعات کرے تاکہ زیارت تربیت نفس کا سبب بنے۔

ولایت پورٹل: کے مطابق کچھ شیعہ افراد نے اپنے ایک استفتاء میں حضرت آیت الله سیستانی سے زائرین اربعین سید الشهداء حضرت امام حسین (ع) کے سلسلہ میں رہنمائی چاہی ، آپ کے اس استفتاء کا تفصیلی متن مندرجہ ذیل ہے:
حضرت آیت‌ الله سیستانی (دام ظلّه الوارف)
السلام علیکم ورحمة الله وبرکاته
عظم الله لکم الأجر
ہم جو اربعین سیدالشهداء (ع) کے موقع پر کربلا کی سمت رواں دواں ہیں ، اس سفر کی برکتوں کے حصول اور اس سے زیادہ زیادہ سے  ثواب حاصل کرنے کے لئے وہ چیزیں جس سے ہم غافل ہیں آپ ہدایت و رہنمائی فرمائیں، امید ہے کہ آپ کی یہ راہنمائی پورے معاشرے کے شامل حال ہوگی۔
خداوند متعال آپ کے وجود کا سایہ ہمارے سروں پر باقی رکھے ۔( إنّه سمیع قریب ، وہ نزدیک سے میری باتوں کا سننے والا ہے )
جواب:
بسم الله الرحمن الرحیم
الحمد لله رب العالمین والصلاة والسلام علی سیدنا محمد وآله الطاهرین
خداوند متعال نے جن مؤمنین کو زیارت امام حسین علیہ السلام کی توفیق عطا کی ہے مناسب ہے کہ وہ اس بات پر توجہ کریں کہ خداوند متعال نے اپنے بندوں کے درمیان سے پیغمبروں اور اوصیاء کا انتخاب کیا تاکہ لوگوں کے درمیان اس کی حجت رہیں اور تعلیم کے ذریعہ لوگ ہدایت کریں نیز لوگ ان کے اعمال کی پیروی کریں۔ خداوند متعال نے مؤمنین کو متبرک مقامات کی زیارت کی توفیق اس لئے دی ہے کہ ان کے مقام کو بلندی عطا کرسکے، حضرت امام حسین علیہ السلام کی شخصیت بندگی کے برترین مرتبہ پر فائز ہے کیوں کہ آپ نے دین کی حفاظت و بقا میں خدا کی راہ میں جھاد اور فداکاری کی ، آپ کا یہ کارنامہ یاد خدا اور تعلیم و احکام الھی کے احیاء کا سبب بنا۔
لہذا اس زیارت کا لازمہ یہ ہے کہ زائر امام حسین علیہ السلام کی جاں فشانی کو یاد کرنے کے علاوہ ، احکام و تعلیم دین من جملہ نماز، حجاب، اصلاح ، گذشت و فداکاری ، صبر و برد باری، ادب ، قوانین اور دیگر پسندیدہ باتوں کی مراعات کرے تاکہ زیارت تربیت نفس کا سبب بنے۔


1
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम