Code : 2226 93 Hit

آرامکو پر حملہ ایران کا جنگی اقدام ہے: بن سلمان کی ہذیان گوئی

سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان نے ایک امریکی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے ہوئے کہا کہ تیل کمپنی آرامکو پر حملہ ایران کی طرف سے جنگی اقدام ہے۔

ولایت پورٹل:رشیا ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق ق سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے امریکی چینل سی بی سی کو دیئے جانے والے اپنے ایک انٹرویو میں کہا کہ میں امریکی وزیرخارجہ کی رائے سے متفق ہوں کہ ہماری تیل کمپنی پر حملہ ایران کی طرف سے ایک جنگی اقدام ہے تاہم ایران نے سعودی تیل کمپنی آرامکو پر ہونے والے حملے میں ملوث ہونے کا شدت کے ساتھ انکار کیا ہے، ایران کا کہنا ہے کہ سعودی حکام یمن کی عوامی تنظیم انصاراللہ کی دفاعی طاقت کو قبول نہیں کرنا چاہتے اسی لئے اس حملے کی ذمہ داری ایران پر ڈال رہے ہیں ،بن سلمان  نے مزید کہا کہ بین الاقوامی برادری ایران کے مقابلے میں سخت قدم اٹھائے آئے اگر ایسا نہیں کریں گے تو تیل کی قیمتیں آسمان کو چھوئیں  گی  نیز اگر تہران اور ریاض کے درمیان جنگ ہوتی ہے تو  عالمی اقتصاد تباہ وبرباد ہوجائے گا ،جب ترکی میں قائم سعودی سفارت خانے میں صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے بارے میں ان سے سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ میں نے اسے قتل کرنے کے لیے نہیں کہا لیکن ملک کے اعلی عہدیدار ہونے کی حیثیت سے اس کی ذمہ داری میرے اوپر عائد ہوتی ہے کہ میں اس کے بارے میں تحقیق کرنے کا حکم دوں، ولی عہد بن سلمان نے پہلی بار آرامکو حملے کے بارے میں صراحت کے ساتھ گفتگو کی ہے اور کہا ہے کہ اگر دنیا ایران کے مقابلے میں واضح موقف نہیں اپنائے گئی توخطے میں کشیدگی پیدا ہوگی جس کے نتیجے میں تیل کی قیمتوں میں اس قدر اضافہ ہوجائے گا جتنا آج تک کسی نے سوچا بھی نہیں  ہے، آخر انہوں نے کہا کہ کہ امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو ایرانی صدر حسن روحانی کے ساتھ ملاقات کرنا چاہیے اور ایران کی ایٹمی سرگرمیوں کے بارے میں ایک نیا معاہدہ کرنا چاہیے تا کہ مشرق وسطیٰ میں امن قائم ہو سکے


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम