Code : 3567 11 Hit

امریکہ میں نسل پرستی کے خلاف مظاہروں میں کم از کم 11 افراد ہلاک

امریکہ میں نسل پرستی کے خلاف مظاہروں میں اب تک کم از کم 11 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جن میں سے بیشتر سیاہ فام ہیں۔

ولایت پورٹل:لاس اینجلس کے KTLA ٹیلی ویژن چینل نے بتایا ہے کہ سیاہ فام امریکی شہری جارج فلائیڈ کے بہیمانہ قتل کے بعد امریکہ میں مظاہروں اور ہنگاموں کے بعد اب تک کم از کم 11 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔
روسی تاس نیوز ایجنسی کے مطابق ، ہلاک شدگان الینوائے میں شکاگو ، مشی گن میں ڈیٹرایٹ ، نیبراسکا میں عمہا ، آئیووا میں ڈیون پورٹ ، کیلیفورنیا میں آکلینڈ اور کینٹکی میں لوئس ول کے شہری ہیں  اوران میں سے بیشتر افراد کا تعلق سیاہ فاموں سے ہے۔
مذکورہ امریکی چینل نے یہ بھی کہا ہے کہ مظاہروں کے دوران سیکڑوں افراد زخمی ہوئے ہیں  لیکن ابھی تک ان کی صحیح تعداد معلوم نہیں ہے۔
ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق امریکہ میں ہونے والے ملک گیر احتجاج کے سلسلے میں اب تک کم از کم 9300 افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔
واضح رہے کہ امریکی سکیورٹی فورسز نے حالیہ دنوں میں مظاہرین کے خلاف کریک ڈاؤن کیا ہے  جس کی زد میں متعدد صحافی بھی آئے ہیں اور انھیں بھی گرفتار کیا گیا ہے۔
 

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین