قطر ورلڈ کپ میں عرب شائقین کا صہیونی صحافیوں کا بائیکاٹ

میڈیا اور عالمی سوشل نیٹ ورکس میں ایسی تصاویر شائع کی گئی ہیں جن میں دکھایا گیا ہے کہ قطر میں ہونے والے ورلڈ کپ کے دوران عرب شائقین نے صیہونی صحافیوں کا بائیکاٹ کیا ہے۔

ولایت پورٹل:دنیا بھر کے ذرائع ابلاغ قطر میں صیہونی صحافیوں کی ایسی تصاویر اور ویڈیوز شائع کر رہے ہیں جن میں عرب شائقین ان کے ساتھ بات نہیں کرنا چاہتے، امریکی خبر رساں ایجنسی روئٹرز نے صہیونی چینل 12 کے رپورٹر کے حوالے سے خبر دی ہے کہ اس صہیونی رپورٹر کو دو سعودی شائقین، ایک قطری شہری اور تین لبنانی شائقین نے نظر انداز کیا ہے۔
واضح رہے کہ سوشل میڈیا پر "اسرائیلی میڈیا پر پابندی" اور "اسرائیلی صحافیوں کو نظرانداز کرنا" جیسی سرخیوں کے ساتھ ایک ویڈیو گردش کر رہی ہے۔
قابل ذکر ہے کہ ورلڈ کپ کے دوران قطر نے تل ابیب سے اپنے ملک کے لیے براہ راست پروازوں کی اجازت دی ہے جس کے بعد کہا جاتا ہے کہ قطر میں اس وقت 10000 سے 20000 کے درمیان اسرائیلی موجود ہیں، تاہم صیہونی صحافیوں اور دیگر صیہونی آباد کاروں کی موجودگی کو قطری شہریوں اور دیگر عرب زبان شائقین نے شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔
یاد رہے کہ ورلڈ کپ کے آغاز سے قبل تل ابیب کے حکام نے درخواست کی کہ قطری حکومت آباد کاروں کی سہولت کے لیے دوحہ میں صیہونی حکومت کے دفتر کے قیام کی اجازت دے، تاہم اس درخواست کو ورلڈ کپ کے میزبان نے مسترد کر دیا۔
یاد رہے کہ اس سے قبل صیہونی حکومت کے ذرائع ابلاغ نے 2022 ورلڈ کپ کے دوران اس حکومت کی موبائل کمیونیکیشن کمپنیوں کے ساتھ تعاون کی قطر کی مخالفت کرنے پر فیفا سے اس حکومت کی شکایت کی تھی۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین