Code : 3760 6 Hit

امریکہ میں نسل پرستی کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ جاری؛مظاہرین نے کولوراڈو شاہرہ بند کردی

امریکی ریاست کولوراڈو کےاورورا شہر میں 23 سالہ سیاہ فام خاتون ایلیا میک کلیلن کے قتل کے خلاف مظاہرہ کرنے والوں نے کولوراڈو ہائی وے بلاک کردیا۔

ولایت پورٹل:سی این این نیوز کی رپورٹ کے مطابق امریکہ کے مختلف شہروں میں ادارہ جاتی نسل پرستی کے خلاف مظاہرے جاری ہیں اسی سلسلہ میں ریاست کولوراڈو میں مظاہرین نے احتجاج کیا اور ایک شاہراہ بلاک کردی ۔
مظاہرین نے 23 سالہ سیاہ فام خاتون کے قتل کے لئے انصاف کا مطالبہ کیا ۔
رپورٹ کے مطابق کولوراڈو کے شہر ارورا کے رہائشی 23 سالہ سیاہ الیا میک کلین کے قتل کے خلاف مظاہرے ہفتے کے روز بھی جاری رہے۔
رپورٹ کے مطابق مظاہرین نے کولوراڈو میں ہائی وے 224 کو بند کرکے پرامن مظاہرہ کیا اور مک کلین کے قتل کیس میں انصاف کے مطالبہ پر مبنی نعرے لگائے۔
یادرہے کہ میک کلین اگست میں ارورہ پولیس کے ساتھ ہونے والی جھڑپ کے دوران جاں بحق ہوگئیں۔
رپورٹ کے مطابق مبینہ طور پر امریکی پولیس افسر نے جھڑپ کے بعد اس سیاہ فام نوجوان خاتون کی گردن دبائی جس کی وجہ سے انھیں دل کا دورہ پڑا اور وہ تین دن بعد اسپتال میں دم توڑ گئیں۔
ہفتے کے روز مظاہرین نے پہلی بار ارورہ میونسپل سنٹر کے سامنے ریلی نکالی  اور ایک گھنٹہ بعد  وہ کولوراڈو کیر ہائی وے 224 کی طرف روانہ ہوئے اور اسے بلاک کردیا۔
تاہم ارورہ پولیس کا کہنا ہے کہ مظاہرین کے شاہرہ پر پہنچنے سے ہی پولیس نے اس کو بند کردیا تھا۔
پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ مک کلین کے قتل کے خلاف ہونے والا مظاہرہ پرامن رہا اور کوئی بھی زخمی یا گرفتار نہیں ہوا۔
یادرہے کہ کولوراڈو ریاست ارورہ میں مظاہرہ ایسے وقت میں ہوا ہے جبکہ امریکہ کے مختلف حصوں میں جارج فلائیڈ کے قتل کے بعد ریاستہائے متحدہ میں تشدد اور تنظیمی نسل پرستی کے خلاف ملک گیر احتجاج جاری ہے۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین