امریکہ کا یوکرین جنگ کو بھڑکانے کا ایک اور اقدام

امریکی صدر جوبائیڈن نے یوکرین کے لیے ایک اور فوجی امدادی پیکج بھیجنے کا اعلان کیا ہے جس میں جدید راکٹ سسٹم بھی شامل ہے۔

ولایت پورٹل:امریکی صدر جو بائیڈن نے یوکرین کے لیے ایک نئے فوجی امدادی پیکیج کا اعلان کیا ہے جس میں ایچ آئی ایم اے آر ایس راکٹ سسٹم بھی شامل ہے، جوبائیڈن نے اپنے بیان میں کہا کہ نیا پیکج انہیں (یوکرینیوں کو) نئی صلاحیتوں اور جدید ہتھیاروں سے لیس کرے گا جس میں ایچ آئی ایم اے آر ایس بھی شامل ہے۔
امریکی میڈیا کے مطابق، جوبائیڈن یوکرین کو خود مختار، آزاد، خوشحال اور دفاعی صلاحیت سے لیس دیکھنا چاہتے ہیں، امریکی صدر کا کہنا ہے کہ ہتھیاروں کی نئی کھیپ یوکرین کو میدان جنگ میں اہم اہداف کو نشانہ بنانے کے قابل بنائے گی۔
واضح رہے کہ اس نئے امریکی ایڈوانس راکٹ سسٹم سے یوکرین 5 میل دور تک کے ہدف کو نشانہ بنانے کے قابل ہوجائے گا، یوکرینی صدر ولادیمیر زیلنسکی نے اپنے ملک کی موجودہ صورتحال پر کہا کہ یوکرین کے مشرقی علاقے میں ہر روز 100 یوکرینی فوجی مارے جا رہے ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ یوکرین کو 120 سے 140 کلومیٹر تک مار کرنے والے ہتھیاروں کی ضرورت ہے،انہوں نے مزید کہا کہ امریکی ایڈوانس راکٹ سسٹم روس پر حملے کے لیے استعمال نہیں ہوں گے اس لیے کہ ہم روسی سرزمین پر جا کر نہیں لڑ رہے بلکہ ہمیں اپنے شہروں کا دفاع کرنا ہے۔
دوسری طرف امریکہ کی جانب سے یوکرین کو جدید راکٹ سسٹم فراہم کرنے کے اعلان پر روس نے برہمی کا اظہار کیا ہے۔
روسی نائب وزیر خارجہ نے کہا کہ یوکرین کو جدید راکٹ سسٹم دینے کا امریکی فیصلہ انتہائی منفی ہے۔
ان کا کہنا ہے کہ یوکرین کو جنگی سازوسامان دینے سے براہ راست تصادم کا خطرہ بڑھ جائے گا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین