Code : 3353 36 Hit

کورونا کی آڑ میں تیل کی چوری

جہاں شامی حکومت ملک میں کورونا وائرس کے پھیلنے سے نمٹنے کے لئے کام کر رہی ہے وہیں امریکی خفیہ ادارہ سی آئی اے اس ملک کے مشرقی حصہ میں مقامی کرائے کے افراد کی مدد سے تیل چوری کررہا ہے۔

ولایت پورٹل:انٹر ریجنل اخبار رای الیوم کے ایڈیٹر اور معروف صحافی  عبد الباری عطوان نے اپنے ایک مضمون میں لکھا ہے کہ شام کےطبی نظام کوملک کی خانہ جنگی کی وجہ سے شدید نقصان پہنچا ہے اور اس وقت اس ملک کو کورونا وائرس پھیلنے کے دوران مغربی ممالک کی جانب سے عئد پابندیوں کی وجہ سے اسپتالوں میں بستر ، وینٹی لیٹر  جیسے دیگر سامان کی شدید قلت کا سامنا ہے۔
عطوان نے مزید لکھا ہے کہ شامی حکومت ملک میں کورونا وائرس کے پھیلنے سے نمٹنے میں مصروف ہونے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے امریکی خفیہ ادارہ سی آئی اے مقامی کرائے کے افراد کی مدد سے اس ملک کے مشرقی فرات کے حصہ میں واقع آئیل فیڈز پرقبضہ کرکے وہاں سے چوری کررہا ہے۔
عرب صحافی نے اپنے مضمون میں لکھا ہے کہ شام کے الحسقہ علاقہ سے موصولہ اطلاعات کے مطابق سی آئی اے نے شام کی آئیل فیلڈز کی حفاظت اور خطے میں تیل سمگل کرنے کے لئے شامی کرد ڈیموکریٹک فورس کے مسلح افراد کو بھرتی اور تربیت دینے کے لئے ایک آپریشن شروع کیا ہے۔
عطوان نے اپنےمضمون میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ان ریمارکس کا حوالہ دیا کہ امریکی افواج شام میں تیل کے کنوؤں کو داعش یا شام کی حکومت (جو ان قدرتی وسائل کا اصل مالک ہے)کے ہاتھوں میں جانے سے روکنے کے لئے شام میں ہی رہیں گی۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین