آل سعود منصورہادی کو یمن واپس نہیں جانے دے رہے؛ مستعفی یمنی حکومت کے عہدہ دار کا انکشاف

 عبدالعزیز جباری نے انکشاف کیا کہ متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب نے مستعفی یمنی حکومت کے سربراہ عبدالمنصور ہادی کی توہین کرتے ہوئے انہیں دھمکیاں دی ہیں۔

ولایت پورٹل:یمن کی جنگ میں سعودی اتحاد کی شکست کے بارے میں گزشتہ روز یمنی حکومت مستعفی ہونے والے دو سرکاری عہدہ داروں کے بے مثال بیان دیا ہے جن میں سے ایک نے انکشاف کیا کہ ریاض اور ابوظہبی مستعفی سربراہ مملکت کو یمن واپس جانے نیز تیل اور گیس برآمد کرنے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں۔
واضح رہے کہ  مستعفی یمنی حکومت کے ڈپٹی اسپیکر عبدالعزیز جباری نے بدھ کی شام بلقیس چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے بارے میں یہ انکشاف کیا، مستعفی یمنی حکومت کی پارلیمنٹ کے ڈپٹی اسپیکر نے کہا کہ یمنیوں سے ان کےملک میں فیصلہ سازی کی طاقت چھین لی گئی ہے اور ہمارےملک کے شہروں میں ایسی ملیشیا بھیجی گئی ہے جو غیر یمنیوں کی مرضی سے کام کر رہی ہیں۔
 عبدالعزیز جباری نے مزید انکشاف کیا کہ متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب نے مستعفی یمنی حکومت کے سربراہ عبدالمنصور ہادی کی توہین کرتے ہوئے انہیں دھمکیاں بھی دی ہیں اور کہا ہے کہ وہ انہیں واپس یمن جانے کی اجازت نہیں دیں گے۔ جباری نے مزید کہا کہ وہ آنے والے ہفتوں میں یمن آنا چاہتے ہیں اور یمن کو بچانے کے لیے ایک قومی محاذ بنانا چاہتے ہیں۔
 انہوں نے مزید کہا کہ وہ برسوں سے سعودی اتحاد کے ساتھ تعلقات کی اصلاح کے لیے کوشاں ہیں،تاہم ان اقدامات کا کوئی فائدہ نہیں ہوا، یمنی پارلیمنٹ کے ڈپٹی اسپیکر نے یہ بھی کہا کہ یمن کے بارے میں کل کے ان کے بیان سے سچائی کا صرف ایک حصہ سامنے آیا ہے، انہوں نے کہا کہ غیر ملکی یمن کا دفاع نہیں کر سکتے اور یمنیوں کے علاوہ دیگر لوگ اس وقت ہمارا ملک چلا رہے ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین