لبنان کے حالیہ فسادات میں آل سعود کے ملوث ہونے کا انکشاف

لبنانی ذرائع نے ولید جنبلاط کو سعودی عرب کی طرف سے دیے جانے والے ایک پیغام کی اطلاع دی کہ وہ 14 مارچ کے معاہدے کی تجدید کریں تاکہ حزب اللہ کے خلاف ایک اسلامی عیسائی محاذ بنایا جائے۔

ولایت پورٹل:لبنانی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ لبنان میں موجود سعودی سفارت خانے سے وابستہ سیاسی شخصیت نے پروگریسو سوشلسٹ پارٹی کے رہنما ولید جنبلاط کو بتایا کہ 14 مارچ کو معاہدے کی تجدید کا وقت آگیا ہےجبکہ ولید جنبلاط کے قریبی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ اس سیاستدان نے حزب اللہ کے خلاف اسلامی عیسائی محاذ بنانے پر زور دیا تھا جس کی بنیاد انہوں نے لبنانی فورسز پارٹی کے رہنما سمیر جعجع سے ملاقاتوں پر رکھی تھی۔
 لبنانی روزنامہ الاخبار نے ولید جنبلاط کے حوالے سے بتایا کہ انہوں نے سیاسی شخصیت کو اس موقف کے بارے میں خبردار کیا کہ  ایسے کچھ نہیں ہونے والا، رپورٹ کے مطابق جمبلاط نے اس بات پر بھی زور دیا کہ وہ اس وقت ڈروز کمیونٹی کے معاشی اور روزی روٹی کے بحران سے نمٹ رہے ہیں اور ڈروز کمیونٹی کے درمیان کسی بھی قسم کی بغاوت کو روکنے کی کوشش کر رہے ہیں لہذا وہ کسی ایسے محور میں داخل نہیں ہونا چاہتے جو لبنان میں ایک بڑا مسئلہ پیدا کرے۔
واضح رہے کہ لبنانی پروگریسو سوشلسٹ پارٹی کے رہنما نے کل لبنانی پارلیمنٹ کے اسپیکر نبیہ بری سے ملاقات کے بعد کہا کہ کچھ بین الاقوامی اور عرب جماعتیں لبنان میں کشیدگی اور تنازعات کو بڑھانے کی کوشش کر رہی ہیں، انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہم اصلاحات کے ایشو اور ان امور کی پیروی کر رہے ہیں جن کے لیے حکومت تشکیل دی گئی ہے اور حکومت کے کام میں خلل نہیں آنا چاہیے۔
 دوسری طرف ، لبنان کے مفتی اعظم شیخ عبداللطیف دریان نے حضور نبی اکرم ﷺ کی  ولادت کی سالگرہ کے موقع پر لبنانیوں کے نام ایک پیغام میں کہاکہ  کس نے کہا کہ ہمیں جرم کے دوران انصاف کی پرواہ نہیں ہے ؟ یہ ایک واضح راستہ ہے جس پر قائم رہنا چاہیے تاکہ لوگ سیاسی راستے کے ساتھ ساتھ عدلیہ کے بارے میں اختلاف نہ کریں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین