یمن میں آل سعود کی متحدہ عرب امارات سے وابستہ فوجی ٹھکانوں پر بمباری

یمن کے صوبہ شبوا میں سعودی فوج نے متحدہ عرب امارات سے وابستہ کرائے کے فوجیوں  کےٹھکانوں پر بمباری کی جس کے نتیجہ میں اماراتی فوج کا بھاری مقدار میں جانی اور مالی نقصان ہوا۔

ولایت پورٹل:یمنی ذرائع ابلاغ کی رپورٹ کے مطابق سعودی جارح اتحاد کے جنگجوؤں نے متحدہ عرب امارات سے وابستہ کرائے کے فوجیوں کے فوجی سازوسامان کے قافلے پر حملہ کیا،رپورٹ کے مطابق حملوں کے دوران العمالقہ (متحدہ عرب امارات سے وابستہ) نامی گروہ کے کرائے کے فوجیوں کا بھاری مقدار میں نقصان ہوا۔
ان ذرائع کے مطابق یہ حملہ صوبہ شبوا کے مغرب میں "عین" اور "بیجان" کے درمیانی علاقوں میں ہوا،ذرائع نے بتایا کہ حملوں کے دوران العمالقہ کے عناصر کی بڑی تعداد ہلاک اور زخمی ہوئی نیز ان کا فوجی سازوسامان تقریباً تباہ ہو گیا۔
دریں اثنا، اتحادی جنگجوؤں نے 30دسمبر کو شبوہ میں مستعفی یمنی حکومت (ریاض سے وابستہ) کے کرائے کے فوجیوں کے ہیڈ کوارٹر پر بھی بمباری کی،عسکری ذرائع کا کہنا ہے کہ حملہ شبوہ کے شمال مغرب میں واقع شہر مرخیح کے اللوطمہ کے علاقے میں مستعفی سرکاری فورسز کے ایک گروپ پر کیا گیا۔
ان ذرائع کے مطابق حملے کے دوران مستعفی حکومت کے عناصر کے ہیڈ کوارٹر کو تباہ کر دیا گیا اور اس کے نتیجے میں ان میں سے 15 عناصر ہلاک اور 6 زخمی ہو گئے،دریں اثنا متحدہ عرب امارات سے وابستہ عناصر شبوا پر قابض ہیں اور مستعفی حکومت اور اخوان سے وابستہ عناصر کو نکال باہر کیا جا رہا ہے۔
یادرہے کہ متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب، جنہوں نے اپریل 2015 میں مفرور یمنی صدر کو واپس لانے کے لیے یمنی عوام کے خلاف بھرپور جارحیت کا آغاز کیا تھا، اس وقت ملک کے جنوب میں ایک تلخ تنازعہ میں الجھے ہوئے ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین