آل سعود کا فلسطینیوں کی پیٹھ میں سب سے بڑا خنجر

ایک لبنانی اخبار نے اسرائیلی وزیر اعظم کے دورہ سعودی عرب کو فلسطین کی پیٹھ میں سب سے بڑا سعودی خنجر گھونپنا قرار دیا ہے۔

ولایت پورٹل:صیہونی ذرائع ابلاغ نے پیر (کل) کو اطلاع دی تھی کہ نیتن یاہو نے سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے ملاقات کی ،جس کے بعد عالم اسلام اور عرب ممالک کے عہدیداروں میں شدید مذمت اور منفی رد عمل دیکھنے کو ملا ، اسی سلسلہ میں لبنان کے روزنامہ الاخبار نے "سعودی عرب کا فلسطین کے لئے سب سے بڑا خنجر" کے عنوان سے اس دورے کا تجزیہ کرتے ہوئے لکھا کہ اگرچہ ریاض کی وزارت خارجہ نے نیتن یاھو کی بن سلمان سے ملاقات کی تردید کی  لیکن اس حقیقت سے انکار نہیں کیا کہ صیہونیوں نے اس  سرزمین کا سفر کیا  ،یہ ایک ایسی کارروائی ہے جو ایک نئے مرحلے کے آغاز کی نشاندہی کرتی ہے جسے صیہونی-سعودی  اعلانیہ اتحاد کہا جا سکتاہے۔
رپورٹ کے مطابق ، اس سفر سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ دونوں فریق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اقتدار سے ہٹائے جانے سے پہلے ہی مہم جوئی کرنےکا ارادہ رکھتے ہیں اور اس کا سب سے بڑا خطرہ فلسطین کے لئے ہے۔
الاخبار نے مزید لکھا کہ فلسطینیوں کا خیال ہے کہ اس دورے سے ابھی تک ایک جامع اور ٹھوس معاہدہ نہیں ہوا ہے لیکن اس سے مقبوضہ علاقوں کے اندر نیتن یاہو کی صورتحال بہتر ہوگی۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین