صیہونیوں کے خلاف بحرینی شہری کا انوکھا احتجاج

ایک بحرینی شخص کو جب پتا چلا کہ جوکپڑے اس نے خریدے ہیں یہ  مقبوضہ فلسطین میں تیار ہوئے ہیں تو اس نے ان کپڑوں کو آگ لگا دی ۔

ولایت پورٹل:صیہونی وزیر خارجہ یائر لاپڈ نے حال ہی میں بحرینی حکام سے ملاقات کے لیے اس ملک کا سفر کیا،تاہم اس سفر اور بحرین میں صیہونی سفارت خانے کے افتتاح  کرنے کے رد عمل میں بحرینی شہریوں نے احتجاج کیا اور سوشل میڈیا پر احتجاجی ہیش ٹیگ شروع کیے۔
العہد نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق  احتجاج کے بعد  ایک بحرینی شہری جس نے منامہ مارکیٹ سے اپنے لیےکپڑے خریدے تھے ، تاہم جب اسے پتا چلا کہ یہ کپڑے  مقبوضہ فلسطین میں تیار ہوئے ہیں تو اس نے انھیں آگ لگا دی ۔
بحرین کے الوفاق اپوزیشن گروپ نے اپنے ٹوئٹر پیج پر ویڈیو پوسٹ کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ صہیونی اشیاء بحرین کی مارکیٹ میں فروخت ہورہی ہیں لہذا خریدنے سے پہلے محتاط رہیں۔گزشتہ جمعہ کو درجنوں بحرینی نوجوانوں نے منامہ میں اسرائیلی سفارت خانے کے سامنے فلسطینی جھنڈے ہاتھوں میں لے کر تل ابیب کے ساتھ سمجھوتے کے خلاف نعرے لگائے۔
صیہونی وزیر خارجہ کے اس سفر کے سلسلے میںعبرانی زبان کے اخبار ہاریٹز نےاپنی ایک رپورٹ میں لکھا کہ تل ابیب اور منامہ ایرانی ڈرونز کا مقابلہ کرنے کے لیے تعاون کے خواہاں ہیں۔
ہاریٹز نے اسرائیلی وزارت خارجہ کے حوالے سے بتایا کہ کل بحرین کے دورے کے دوران اسرائیلی وزیر خارجہ نے ایرانی ڈرونز کے ساتھ محاذ آرائی پر تبادلہ خیال کیا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین