مسجد الاقصی کی بے حرمتی کرنے کا سنگین تاوان ادا کرنے پڑے گا؛حماس کا صیہونیوں کو انتباہ

فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس نے مسجد الاقصی کی بے حرمتی کرنے پر صیہونیوں کو انتباہ دیتے ہوئے بیت المقدس کے باشندوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ زیادہ سے زیادہ مسجد الاقصی میں آئیں۔

ولایت پورٹل:فلسطین کی مزاحمتی تحریک حماس نے اسرائیل کو خبردار کیا ہے کہ اگر قابض حکومت نے مسجد اقصیٰ کی مسلسل بے حرمتی بند نہ کی  تواس کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے، حماس کے ترجمان محمد حمادہ نے مسجد کے احاطے میں دیکھ بھال اور بحالی کے کام میں رکاوٹ ڈالنے کی اسرائیل کی کوششوں کی مذمت کرتے ہوئے القدس کے لوگوں سے مطالبہ کیا کہ وہ ان حالات میں مسجد میں مزید کثرت سے آئیں۔
حماس نے مقدس شہر میں اسلامی اوقاف کے عہدیداروں اور اسلامی اوقاف کے ملازمین کے خلاف اسرائیل کی جارحیت کی بھی مذمت کی، یادرہے کہ اسرائیلی قانون سازوں اور آباد کاروں کے لیے مسجد اقصیٰ کے احاطے میں اشتعال انگیزی سے گھسنا، فلسطینیوں کو مشتعل کرنا ایک معمول کی بات ہے۔ اس طرح کے بڑے پیمانے پر آبادکاروں کی توڑ پھوڑ تقریباً ہمیشہ تل ابیب کے حمایت یافتہ ہیکل گروپس کے کہنے پر اور القدس میں اسرائیلی پولیس کی سرپرستی میں ہوتی ہے۔
واضح رہے کہ اکتوبر 2021 میں ایک اسرائیلی عدالت نے مسجد اقصیٰ کے احاطے میں یہودیوں کی نماز پر پابندی کو برقرار رکھا، اس کے بعد ایک نچلی عدالت کے ایک پہلے فیصلے نے مختلف فلسطینیوں اور پوری مسلم دنیا میں غم و غصے کو جنم دیا، تاہم اسی سال مئی میں، مسجد اقصیٰ میں فلسطینی نمازیوں کے خلاف متواتر تشدد کی کارروائیوں کے نتیجے میں غزہ کی پٹی میں فلسطینی مزاحمتی گروپوں اور اسرائیلی حکومت کے درمیان 11 روزہ جنگ چھڑ گئی، جس کے دوران حکومت نے کم از کم 260 فلسطینیوں کو ہلاک کیا، جن میں 66 بچے بھی شامل تھے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین