ایرانی اور برطانوی وزراء خارجہ کی ملاقات متوقع

برطانوی وزیر خارجہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنے ایرانی ہم منصب سے ملاقات کریں گے جس میں نازنین زاغری سمیت برطانوی قیدیوں کی رہائی پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

ولایت پورٹل:برطانوی اخبار دی انڈیپنڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق برطانیہ کی نئی خارجہ لیز ٹیرس ، جو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں شرکت کے لیے نیویارک جا رہی ہیں ، ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان سے ملاقات کریں گی تاکہ نازنین زاغری سمیت ایران میں زیر حراست برطانوی شہریوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا جا سکے۔
 دی گارڈین نے بھی اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہےکہ ٹیرس نے 2018 کے بعد دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ کی سطح پر ہونے والی پہلی ملاقات سے پہلے کہا کہ وہ اپنے ایرانی ہم منصب سے ایران کے قید تمام برطانوی  شہریوں کی فوری اور مستقل رہائی کے بارے میں بات کریں گی جن کے بارے میں ان کا دعویٰ ہے کہ انہیں ایران میں غیر قانونی طور پر حراست میں لیا گیا ہے ۔
برطانوی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ  انہیں برطانوی شہریوں کی رہائی کی یقین دہانی کرائی جانی چاہیے تاکہ دونوں ممالک  کے درمیان خراب ہوئے تعلقات کو ٹھیک کرتے ہوئے ایک ساتھ کام کرنا شروع کیا جاسکے۔
 اخبار نے مزید لکھا ہے کہ کچھ باخبر ذرائع نے اتوار کو گارڈین کو بتایا کہ کم از کم تین برطانوی قیدیوں کی رہائی کو یقینی بنانے کے لیے ایک پیچیدہ اور کثیر القومی معاہدہ حال ہی میں کچھ امریکی قیدیوں کی رہائی کی وجہ سے تحلیل ہو گیا ، اس معاہدے میں بظاہر اسلامی انقلاب سے قبل کے سالوں میں ایران کے برطانیہ کے بقایا سے متعلق سوئس بینک اکاؤنٹ کے ذریعے ایران کو 400 ملین یورو کی منتقلی شامل تھی۔
 گارڈین کے مطابق  ٹیرس نے خبردار کیا کہ نئی ایرانی حکومت کی ویانا میں جوہری معاہدے کی بحالی پر مذاکرات میں مسلسل تاخیر کا مطلب سفارتکاری کی گنجائش کا کم  ہوناہوسکتا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین