Code : 3384 17 Hit

جنگ بندی عملی ہونا چاہیے نہ کہ صرف لفظی:انصار اللہ

انصاراللہ موومنٹ کی سپریم پولیٹیکل کونسل کے ممبر اور یمنی سپریم انقلابی کمیٹی کے چیئرمین نے جنگ بندی میں توسیع کے سعودی اتحاد کے دعوے پر ردعمل کا اظہار کیا۔

ولایت پورٹل:انصار اللہ کی سپریم پولیٹیکل کونسل کے ممبر اور یمنی سپریم انقلابی کمیٹی کے چیئرمین  محمد علی الحوثی نے اس بات پر زور دیا کہ جنگ بندی عملی ہونا چاہیےنہ کہ صرف لفظی ہونا چاہیے۔
الحوثی نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر لکھاکہ ہم عمل کے منتظر ہیں ، الفاظ کے نہیں
انھوں نے مزید کہا کہ جنگ بندی صرف میڈیا  میں نہیں ہونا چاہئے جیسا کہ پچھلے دو ہفتوں میں ہوتا  چلا آرہا ہےاور جیسا کہ  اعلان کیا گیا تھا اس کے برخلاف ہمیں  تمام محاذوں پر امریکی  ، سعودی ،اماراتی اتحاد اور ان کے اتحادیوں کی جارحیت، بم دھماکوں اور فوجی لڑائیوں میں اضافہ ہی دیکھنے کو ملا ہے۔
واضح رہے کہ یمن میں سعودی اتحادی افواج کے سرکاری ترجمان ، ترکی المالکی نے جمعہ کے روز اعلان کیا ہے کہ یہ اتحاد جمعرات (23 اپریل) سے ایک ماہ کے لئے جنگ بندی میں توسیع کرے گا۔
المالکی نے دعوی کیا کہ یہ اقدام اتحادیوں کی جانب سےیمنی بھائیوں کے مصائب کو کم کرنے اور رمضان المبارک کے دوران کورونا وائرس کے پھیلنے سے نمٹنے کے لئے سنجیدہ کوشش کے مطابق کیا گیا ہے۔
دریں اثنا  یمنی مسلح افواج کے سرکاری ترجمان کا کہنا ہے کہ  اتحادی فوج نے یمن کے مختلف  شہروں پر بار بار حملوں سے مبینہ جنگ بندی کی خلاف ورزی کی ہے۔
یادرہے کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات  نے دو ہفتے قبل یمن میں یکطرفہ جنگ بندی شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ یمن میں کورونا کا مقابلہ کرنے کی کوششوں میں مدد فراہم کرنے کے مقصد کے ساتھ تمام فضائی اور زمینی حملوں کا سلسلہ بند ہوگیا ہے  اور اگر دوسرا فریق اس کا استقبال کرتا ہے تو جنگ بندی میں توسیع کی جاسکتی ہے  لیکن اس کے باوجود شائد ہی کوئی دن خالی گیا جس دن مذکورہ جارح اتحاد نے یمن کے بے گناہ عوام پر بربریت کا مظاہرہ نہ کیا ہو۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین