بغداد ائرپورٹ پر کام کرنے والی برطانوی کمپنی کے جنرل سلیمانی کے قتل میں ملوث ہونے کا انکشاف

عراق کی عصائب اہل الحق تنظیم کے سکریٹری جنرل نے سردار قاسم سلیمانی اور ابو مہدی المہندس کے قتل میں بغداد ایئر پورٹ پر کام کرنے والی ایک برطانوی کمپنی کے ملوث ہونے کا ذکرکیا۔

ولایت پورٹل:عراق کی عصائب اہل الحق  تحریک کے سکریٹری جنرل ، قیس الخزعلی نے سپاہ پاسداران کی قدس فورس کے کمانڈر سردار قاسم سلیمانی اور ابو مہدی المہندس کے قتل کے بارے میں تیار کی جانے والی دستاویزی فلم (آخری سفر) میں گفتگو کرتے ہوئے دہشت گردی کی اس کارروائی کے بارے میں نئے انکشافات کیے ہیں اور کہا ہے کہ انہوں نے کہا کہ بغداد ایئرپورٹ پر سیکیورٹی کی ذمہ دار برطانوی کمپنی جے ایف ایس سردار قاسم سلیمانی اور ابو مہدی المہندس کے قتل میں ملوث ہے۔
الخزعلی نے مزید کہاکہ اس برطانوی کمپنی ، جس کا بغداد ایئر پورٹ کے ساتھ سکیورٹی کے معاملات کے سلسلے میں معاہدہ ہے ، نے  سردار سلیمانی اور ابومہدی المہندس کی پہچان بتا کر یہ قاتلانہ کارروائی انجام دینے میں حصہ لیا۔
عصائب اہل الحق  کے سکریٹری جنرل نے مزید کہا کہ بغداد ہوائی اڈے پر معمول کی بات یہ ہے کہ جے ایف ایس  کمپنی کے اہلکارہوائی اڈے پر اترنے والے ہر طیارے کی لینڈنگ سائٹ کے قریب ایک مخصوص جگہ پر ہوتے ہیں لیکن اس دن (ٹارگٹ ڈے) تھا یعنی شہید کمانڈروں کی آمد وہ  واحد دن اور واحد وقت تھا جب مسافر لین کے کے بالکل سامنے کمپنی کی گاڑی کھڑی تھی جس کا مطلب خصوصی مشن تھا۔
واضح رہے کہ اس دستاویزی فلم میں  حادثے کے روز بغداد ایئر پورٹ کے سی سی ٹی وی کیمروں میں ریکارڈ شدہ تصاویر دکھائی گئیں ہیں  جن میں جیسے ہی سردار سلیمانی کو لانے والا طیارہ ایئر پورٹ پر اترا تو سکیورٹی کمپنی جے ایف ایس کی کار کو ان کی طرف جاتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے ۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین