Code : 4063 13 Hit

سعودی اور امارتی چور یمن کا تیل چرا رہے ہیں اور امریکہ شام کا تیل چوری کررہا ہے:یمن

یمنی وزارت خارجہ نے شامی تیل کی چوری کے معاملے میں شامی ڈیموکریٹک فورسزکے نام سے مشہور کرد ملیشیا اور ایک امریکی کمپنی کے مابین غیر قانونی معاہدے کی حمایت میں امریکی حکومت کی معاندانہ کارروائی کی مذمت کی ہے۔

ولایت پورٹل:المسیرہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق یمن کے وزیر خارجہ ہشام شرف نے آج (پیر کو) امریکی تیل کمپنی اور شامی ڈیموکریٹک فورسزکے نام سے مشہور کرد ملیشیا کے مابین شامی تیل فروخت کرنے کے غیر قانونی معاہدے کی نگرانی کرنے مبنی امریکی حکومت کے مخالفانہ اقدام کی مذمت کی ہے،یادرہے کہ امریکی  ریپبلکن سنیٹر لنڈسے گراہم نے حال ہی میں انکشاف کیا ہے کہشامی ڈیموکریٹک فورسز کے کمانڈر انچیف  مظلوم عبدی نے شمال مشرقی شام  میں واقع تیل کے شعبوں کی مرمت کرنے کے لیےایک امریکی تیل کمپنی کے ساتھ ایک معاہدہ کیا ہے۔
یمنی وزیر خارجہ نے اس عمل کو چوری قرار دیتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ صرف شامی عوام کے چور اور دشمن  ہی ایسا کرسکتے ہیں، ہشام شرف نے مزید کہا کہ یہ غیر قانونی معاہدہ عالمی برادری اور اقوام متحدہ کی نگاہوں کے سامنے اور چوروں اور غیر قانونی گروہوں کےساتھ امریکی حکومت کے تعاون سے کیا گیا ہے،ان گروہوں کو وائٹ ہاؤس نے مشرق وسطی میں سازش اور  افراتفری پرمبنی پروپگنڈے کے طور پر پہلے قائم کیا تھا اور پھر ان کو مسلح کیا تھا۔
شرف نےاس اقدام کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ جو کچھ اس وقت شام میں ہورہا ہے وہ یمن میں سعودی اماراتی جارحیت پسندوں اور ان کے حواریوں کے ذریعہ برسوں قبل ہونے والے یمنی تیل اور گیس چوری جرم کے مترادف ہے، اپنے تبصرے کے اختتام پر انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ان گروپوں کے لئے واشنگٹن کی عارضی مدد زیادہ دیر نہیں چلے گی اور یہ اقدامات گروپوں کے مفادات میں نہیں ہوں گے، شرف نے یہ بھی کہا کہ شام کے تیل چور ایک دن بین الاقوامی عدالتوں میں پیش ہوں گے اور غریب اور مظلوم عوام کے خلاف ان کے اقدامات کا جواب دیں گے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین