Code : 411 21 Hit

قرآن مجید کی نظر میں کامیابی کا راستہ

جس نے اپنے دل کو کفر کی نجاست سے پاک کرلیا اور شہادتین کا اقرار کیا اور پانچوں وقت کی نماز ادا کی وہ شخص کامیاب ہے۔

ولایت پورٹل:قرآن مجید میں خدا ارشاد فرماتا ہے:«قَدْ اَفْلَحَ مَنْ تَزکّیٰ وَذَکَرَ اسْمَ رَبِّہٖ فَصَلّٰی»۔(سورہ اعلیٰ:آیت ۱۴ اور ۱۵ )۔
ترجمہ:وہ یقینا دلی مرادکو پہنچا جو (شرک سے )پاک ہوا اور اپنے پروردگار کے نام کا ذکر کرتا اور نماز پڑھتا ہے، اس آیت میں انسان کی کامیابی کا راستہ بتایا جارہا ہے یعنی جس نے اپنے دل کو کفر کی نجاست سے پاک کرلیا اور شہادتین کا اقرار کیا اور پانچوں وقت کی نماز ادا کی وہ شخص کامیاب ہے لہٰذا اگر کوئی کامیابی چاہتا ہے تو اپنے آپ کو کفر کی نجاست سے پاک کرے اور شہادتین کا اقرار کرے اور ساتھ میں خدا کا ذکر کرے یعنی پانچوں وقت کی نماز کوادا کرے،اور نماز کو خشوع و خضوع کے ساتھ پڑھے اس لیے کہ مؤمن کی یہ پہچان ہے لیکن اگر نماز کو بے دلی اور سستی سے پڑھا جائے تو یہ منافق کی پہچان ہے جیسا کہ امام محمد باقر(ع) نے فرمایا کہ طبیعت پر بوجھ ہو سستی ہو یا اونگھ ہو تو نماز کے لئے بوجھل کھڑا ہونا منافق کی پہچان ہے اور مؤمنین کو بھی اونگھ کی حالت میں نماز اداکرنے سے منع کیا گیاہے۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम