Code : 516 30 Hit

محبوبیت کی کنجی

اگر کوئی آدمی یہ چاہتا ہے کہ دوسرے اس کا احترام کریں اسکی عزت کریں،اسے اچھائی سے یاد کریں، اس کے ساتھ اچھا سلوک روا رکھیں تو اسے پہلے عملاً دوسروں کے ساتھ ویسے ہی پیش آنا ہوگا جیسا اسے دوسروں سے توقع ہو۔خلاصہ کلام یہ ہے کہ دوسروں کے نزدیک محبوب بننے اور ان کے دلوں کو جیتنے کی کنجی ان کا احترام کرنا ہے۔

ولایت پورٹل: قارئین کرام! ہر انسان طبیعی و فطری طور پر یہ پسند کرتا ہے کہ دوسرے لوگ اسے عزت و احترام کی نظروں سے دیکھیں اور سب لوگ اس سے محبت سے پیش آئیں اور یہ بھی ایک مسلّم حقیقت ہے کہ یہ خصوصیت کسی  شخص میں بھی پیدائشی طور پر نہیں پائی جاتی بلکہ اس خصوصیت پیدا کرنے کے لئے انسان کا ارادہ اور اس کی آرزو دخیل ہوتی ہےلہذا یہ ایک اکتسابی امر ہے اسے ہر ایک اپنی محنت اور کوشش سے حاصل کرسکتا ہے اور اس کے تمام مقدمات کو فراہم کرسکتا ہے۔
البتہ یہ بات بھی ذہن نشین رہے کہ دوسروں کی نظروں میں محبوب بننے و رہنے کے بہت سے طریقے ہوسکتے ہیں لیکن ہم یہاں صرف ایک طریقہ کی طرف اشارہ کررہے ہیں:
صرف وہ شخص دوسروں کی نظروں میں محبوب ہوسکتا ہے کہ جو پہلے مرحلہ میں خود اپنے لئے عزت کا قائل ہو اور اسے اپنی عزت کروانے کا ہنر آتا ہو اور دوسرے مرحلہ میں دوسروں کا احترام کرنا بھی جانتا ہو،کچھ لوگ بہت زبان دراز ہوتے ہیں وہ بات بات پر دوسروں کا مذاق بنانا جانتے ہیں تو وہ کبھی دوسروں کے دلوں کو تسخیر نہیں کرسکتے بلکہ ایسے لوگوں کی بچی کھچی عزت بھی ختم ہوجاتی ہے اور لوگ ان سے نفرت کرنے لگتے ہیں۔
لیکن اگر کسی شخص کو اپنی عزت عزیز ہوتی ہے تو وہ ہمیشہ دوسروں کا احترام و اکرام کرتا ہے چنانچہ قرآن مجید میں ارشاد ہوتا ہے:’’و قولوا للناس حسنا‘‘۔(سورہ بقرہ:۸۳)
اور تم لوگوں کے ساتھ اچھی باتیں کرو۔ان سے اچھائی سے پیش آؤ۔
لہذا اگر کوئی آدمی یہ چاہتا ہے کہ دوسرے اس کا احترام کریں اسکی عزت کریں،اسے اچھائی سے یاد کریں، اس کے ساتھ اچھا سلوک روا رکھیں تو اسے پہلے عملاً دوسروں کے ساتھ ویسے ہی پیش آنا ہوگا جیسا اسے دوسروں سے توقع ہو۔
خلاصہ کلام یہ ہے کہ دوسروں کے نزدیک محبوب بننے اور ان کے دلوں کو جیتنے کی کنجی ان کا احترام کرنا ہے۔

 


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम