Code : 876 40 Hit

شہزادے کے ہاتھ چومنا جائز لیکن قبر رسول کو بوسہ دینا شرک!!!

وہابیوں کے نزدیک قبر رسول کو بوسہ دینے والا مشرک اور دین سے خارج ہوجاتا ہے لیکن شہزادے کے ہاتھوں کو چومنے والے کے ایمان میں ذرہ برابر بھی فرق نہیں آتا۔

ولایت پورٹل: المسیرہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق یمن کی عوامی تحریک انصار اللہ کے سربراہ عبد المالک الحوثی نے رجب المرجب کی آمد پر تقریر کرتے ہوئے  یمنیوں کی ایمانی پہچان میں تحریف اور انحراف کا انتباہ دیا،انھوں نے کہا رجب کے مہینے میں یمنی حضرت علی علیہ السلام کی دعوت پر مسلمان ہوئے تھے،ہمیں اپنی دینی اور ایمانی پہچان باقی رکھنا ہوگی،الحوثی نے وہابی تکفیریوں کی ایمانی پہچان کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وہ دین اور ایمان کا نام لے کر دین کے منافی کام انجام دیتے ہیں،ہونا تو یہ چاہیے کہ پیغمبر اکرم ﷺ کے احترام اور دوسرے افراد کے ساتھ محبت میں فرق ہو لیکن تکفیری اس کا بالکل الٹا کرتے ہیں ؛ان کی نظر میں رسول خد اﷺ کے سلسلہ میں کسی بھی طرح کا احترام شرک اور گناہ ہے،ان کے نزدیک قبر رسول کو بوسہ دینے والا مشرک اور دین سے خارج ہوجاتا ہے لیکن شہزادے کے ہاتھوں کو چومنے والے کے ایمان میں ذرہ برابر بھی فرق نہیں آتا ۔


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम